البرٹ آئن اسٹائن کی پیشن گوئی کے 100 سال بعد ثقلی امواج کا سراغ لگانے پر بنیادی طبیعیات میں خصوصی بریک تھرو انعام

گزشتہ بریک تھرو انعام کی انتخابی کمیٹی نے ایک ارب نوری سال دوری پر دو بلیک ہولز کے ٹکرانے سے پیدا ہونے والی لہروں کو ریکارڈ کرنے والے تجربے میں شامل افراد کو تسلیم کیا

3 ملین ڈالرز کا انعام لیگو بانیوں رونلڈ ڈبلیو پی ڈریور، کپ ایس تھورن اور رینر ویز اور دریافت میں شامل 1,012حصہ داروں میں تقسیم

سان فرانسسکو، 3 مئی 2016ء/پی آرنیوزوائر/– بنیادی طبیعیات میں بریک تھرو انعام کی انتخابی کمیٹی نے آج بنیادی طبیعیات میں ایک خصوصی بریک تھرو انعام کا اعلان کیا ہے اور 11 فروری 2016ء کو گریویٹیشنل ویوز یعنی ثقلی امواج کا عظیم سراغ پانے والے سائنس دانوں اور انجینئروں کو تسلیم کررہا ہے۔

خصوصی بریک تھرو انعام کسی بھی غیر معمولی سائنسی کامیابی کو تسلیم کرنے کرتے ہوئے کسی بھی وقت دیا جا سکتا ہے۔  3 ملین ڈالرز کا انعام فاتحین کے دو گروپوں میں تقسیم کیا جائے گا: لیزر انٹرفیرومیٹر گریویٹیشنل-ویو آبزرویٹری (لیگو)، جن میں سے ہر ایک 1 ملین ڈالرز میں سے برابر رقم ملے گی؛ اور تجربے میں حصہ لینے والے 1,012 افراد، جنہیں مشترکہ طور پر 2 ملین ڈالرز ملیں گے، جنہیں وہ باہم برابر تقسیم کریں گے۔

بانی رونلڈ ڈبلیو پی ڈریور، کالٹیک، پروفیسر طبیعیات، اعزیزی؛ کپ ایس تھورن، کالٹیک، فینمین پروفیسر نظری طبیعیات، اعزازی؛ اور رینر ویز، ایم آئی ٹی، پروفیسر طبیعیات، اعزازی، ہیں۔

انعام آپس میں تقسیم کرنے والے حصہ داروں میں 1,005 مقالہ لکھنے والے شامل ہیں جنہوں نے لیگو اور اس کے ساتھی تجربے، دی ورگو کولابریشن میں شامل متعدد اداروں کے لیے ثقلی امواج کی دریافت کو بیان کیا۔ انعام بانٹنے والوں میں سات سائنس بھی شامل ہیں جنہوں نے لیگو کی کامیابی میں اہم کردار ادا کیا۔ حصہ داروں کے ناموں کا لنک ذیل میں ہے۔

فاتحین کو 2016ء کے موسم خزاں میں ہونے والی 2017ء بریک تھرو انعام تقریب میں تسلیم کیا جائے گا، جہاں حیاتی سائنس اور ریاضی کے علاوہ بنیادی طبیعیات میں سالانہ بریک تھرو انعام بھی دیا جائے گا (جو خصوصی انعام سے الگ ہوگا)۔ باقی دونوں انعامات کے لیے نامزدگیاں 31 مئی 2016ء تک کھلی ہیں اور انہیں آن لائن https://breakthroughprize.org پر کیا جا سکتا ہے۔

2013ء میں خصوصی بریک تھرو انعام جیتنے والے اسٹیفن ہاکنگ نے کہا کہ “یہ دریافت بہت اہمیت رکھتی ہے: پہلے عمومی اضافیت کے ثبوت اور بلیک ہول سے تعامل کی اپنی پیش بینی کی وجہ سے اور دوسرا نئی فلکیات کے آغاز کے طور پر جو ایک مختلف وسیلے کے ذریعے کائنات کو افشا کرے گی۔ لیگو ٹیم خصوصی بریک تھرو انعام کی حقدار ہے۔”

بریک تھرو انعامات کے بانیوں میں سے ایک یوری ملنر نے کہا کہ “ایک بے مثال ذہین شخص، کئی عظیم سائنس دانوں اور کائنات کی تخلیقی طاقتیں ایک بہترین سائنسی کہانی کو بنانے کے لیے ملیں۔”

انتخابی کمیٹی کے چیئر ایڈور وٹن نے تبصرہ کیا کہ “یہ حیران کن کامیابی ہمیں پہلی بار آئن اسٹائن کے نظریے پر چند غیر معمولی کاموں کا پہلی بار مشاہدہ کرنے دے گی۔ بلیک ہولز کے بارے میں نظریاتی خیالات جو میری طالب علمی کے زمانے میں سائنس فکشن سمجھے جاتے تھے اب حقیقت ہیں۔”

لیگو

لیگو کے ثقلی امواج سراغ لگانے والوں کا تصور اور آر اینڈ ڈی 1960ء کی دہائی میں کیا گیا تھا۔ لیگو 1994ء سے 2002ء کے درمیان کالٹیک اور ایم آئی ٹی کی جانب سے نیشنل سائنس فاؤنڈیشن امریکا کی شراکت داری سے تعمیر کی گئی، جس کا مقصد آئن اسٹائن کے عمومی نظریہ اضافیت کی پیشن گوئی کے مطابق ثقلی امواج کا مشاہدہ کرنا تھا۔ 2010ء سے 2015ء کے دوران ایک بڑے اپگریڈ کے بعد جلد ہی ایک ثقلی موج کا مشاہدہ کیا گیا جو زمین سے گزرتے ہوئے اسپیس ٹائم کو سکوڑتی چلی گئی۔ یہ سکوڑ ہینفرڈ، واشنگٹن اور لونگسٹون، لوزیانا میں لیگو کی دو 4 کلومیٹر طویل مشاہدہ گاہوں میں میٹر کے ایک ارب کے ایک اربویں حصے سے بھی کم تھا۔ یہ لہر دو بلیک ہولز سے نکلی تھی جو سورج سے 30 گنا زیادہ کمیت رکھتے ہیں اور 1.3 ارب نوری سال کے فاصلے پر ایک دوسرے کی جانب چکر کاٹ رہے ہیں۔ یہ دریافت ثقلی امواج فلکیات دانی کے نئے دور کا آغاز کرتی ہے جو فطرت کے ڈرامائی اور زبردست عجوبوں میں سے ایک پر دروازے وا کرتی ہے اور ساتھ ہی ابتدائی کائنات کے راز کھولتی ہے۔

بنیادی طبیعیات میں خصوصی بریک تھرو انعام

بنیادی طبیعیات میں ایک خصوصی بریک تھرو انعام عام سالانہ نامزدگی عمل کے علاوہ انتخابی کمیٹی کسی بھی وقت دے سکتی ہے۔ خصوصی انعام کے گزشتہ فاتحین میں لارج ہیڈرون کولائیڈر ٹیموں کے سات رہنما شامل ہیں جنہوں نے ہگس بوسن کی دریافت کی۔

بنیادی طبیعیات میں 2016ء خصوصی بریک تھرو انعام کے لیے انتخابی کمیٹی میں شامل تھے: نیما اکرانی-حامد، لین ایونز، مائیکل بی گرین، ایلن گوتھ، اسٹیفن ہاکنگ، جوزف انکانڈیلا، تکاکی کاجیتا، ایلکسی کیتائیف، میکسیکم کونتسیوچ، آندرے لنڈے، آرتھر میک ڈونلڈ، ہوان مالداکینا، سال پرلمٹر، الیگسیندر پولیاکوف، ایڈم ریز، جون ایچ شوارز، نیتھن شیربگ، اشوک سین، ییفانگ وانگ اور ایڈورڈ وٹن۔

بنیادی طبیعیات میں بریک تھرو انعام

بنیادی طبیعیات میں بریک تھرو انعام ان انفرادی شخصیات کو تسلیم کرتا ہے جنہوں نے انسانی علم میں گہرا اضافہ کیا ہو۔ یہ تمام طبیعیات دانوں کے لیے کھلا ہو – نظریاتی، ریاضیاتی اور عملیاتی – جو کائنات کے عمیق ترین رازوں پر کام کر رہے ہیں۔ یہ انعام سائنسدانوں کی کسی بھی تعداد کے درمیان تقسیم کیا جا سکتا ہے۔

بنیادی طبیعیات میں بریک تھرو انعام اور بنیادی طبیعیات میں خصوصی بریک تھرو انعام ملنر گلوبل فاؤنڈیشن کی جانب سے ملنے والی گرانٹ سے چلتے ہیں۔

بریک تھرو انعام

پانچویں سال بھی بریک تھرو انعامات دنیا کے سرفہرست سائنسدانوں کو تسلیم کریں گے۔ ہر انعام 3 ملین ڈالرز کا ہے اور حیاتی سائنسز (سال میں زیادہ سے زیادہ پانچ سالانہ)، بنیادی طبیعیات (زیادہ سے زیادہ ایک سالانہ) اور ریاضی (زیادہ سے زیادہ ایک سالانہ) کے شعبوں میں دیے جاتے ہیں۔ مزید برآں، ہر سال چھوٹے محققین کو طبیعیات میں تین تک نیو ہورائزنز انعامات اور ریاضی میں زیادہ سے زیادہ نیو ہورائزنز انعامات دیے جاتے ہیں۔ فاتحین ایک ٹیلی وژن پر نشر کی جانے والی اعزازي تقریب میں شرکت کرتے ہیں جسے ان کی کامیابیوں کا جشن منانے اور سائنس دانوں کی اگلی نسل کو متاثر کرنے کے لیے تیار کیا جاتا ہے۔ تقریب کے شیڈول کے حصے کے طور پر وہ دروس اور مذاکروں کے ایک پروگرام میں بھی شامل ہوتے ہیں۔ بریک تھرو انعامات کی بنیاد سرگئی برن اور اینی ووکیکی، جیک ما اور کیتھی ژینگ، مارک زکربرگ اور پرسکیلا چین اور یوری اور جولیا ملنر نے رکھی تھی۔ انتخابی کمیٹیاں بریک تھرو انعام جیتنے والے سابق فاتحین پر مشتمل ہوتی ہیں جو جیتنے والوں کا انتخاب کرتے ہیں۔

بریک تھرو انعامات پر معلومات www.breakthroughprize.org پر دستیاب ہے۔

بنیادی طبیعیات میں 2016ء خصوصی بریک تھرو انعام

حوالہ: ثقلی امواج پر مشاہدے کے لیے، فلکیات اور طبیعیات میں نئے افق کا آغاز

انعام فاتحین (1,015)

لیزر انٹرفیرومیٹر گریویٹیشنل-ویو آبزرویٹری (لیگو) کے بانی:

رونلڈ ڈبلیو پی ڈریور، کالٹیک
پ ایس تھورن، کالٹیک
رینر ویز، ایم آئی ٹی

حصہ دار (1,012) جنہوں نے لیگو کی کامیابی میں اہم حصے ڈالے۔ حصہ داروں کے ناموں اور ان کے ادارہ جاتی تعلق کی مکمل فہرست https://breakthroughprize.org/News/32 پر پائی جا سکتی ہے۔