‫“ہاٹ اسپا اینڈ سنو پلے” – لیاؤننگ دنیا کو نئے سال کا دعوت نامہ بھیجتے ہوئے

Home » Misc., Official News

‫“ہاٹ اسپا اینڈ سنو پلے” – لیاؤننگ دنیا کو نئے سال کا دعوت نامہ بھیجتے ہوئے

February 14, 2018

شینیانگ، چین، 13 فروری 2018ء/سنہوا-ایشیانیٹ/– خریداری، کھانا پینا، اچھی قسمت کے لیے دعائیں، اشعار … 6 فروری کو روس، افغانستان، تاجکستان،بینن، کینیا سے تعلق رکھنے والے لیاؤننگ یونیورسٹی کے بین الاقوامی طلبہ اور ساتھ ہی مقامی میڈیا نے فوشون اور ینگ کو کا سفر کیا۔ مانچو ثقافت سے لے کر لیاؤہی لوک رسومات تک، چینی روایات کا تجربہ اٹھانے والے ہر شریک نے مقامی افراد کے ساتھ کتے سے منسوب چین کے روایتی سال کا خیرمقدم کیا۔

فوشون کے قدیم شہر ہیتو آلا میں غیر ملکی طلبہ نے مانچو رسومات پر لوک کارکردگی، ہیتو آلا کی تاریخی کہانیوں کے ساتھ ملاحظہ کی تاکہ گردشِ ایام کا تجربہ اٹھائیں۔ ینگ کو کے سرخ پرچم میلے میں غیر ملکی طلبہ نے “مارکیٹ کو جا پکڑیں” کی چینی روایتی تقریب میں حصہ لیا، بہار میلے کے اشعار لکھے اور مقامی اداکاروں کے ساتھ چینی روایتی بہار میلہ روایات پر فو کردار ادا کیے۔

“یہ بڑا مصروف دن تھا۔ میں نے ہر طرف لوگوں کو خوش ہی دیکھا۔ میں نے نہ صرف چینی نئے سال کے ماحول کا تجربہ اٹھایا، بلکہ چینی کھانوں کی مختلف اقسام بھی چکھیں۔ مجھے خوشی ہے کہ مجھے اس خصوصی تقریب میں شرکت کا موقع ملا۔” سوسن کریمی اینجیرو، لیاؤننگ یونیورسٹی کی کینیائی طالبہ، نے کہا۔ انہوں نے کہا کہ وہ “ہر چینی” چیز کی پرستار ہیں۔ اس تقریب نے چینی ثقافت کے بارے میں ان کی سوجھ بوجھ کو بہتر بنایا ہے۔

لیاؤننگ اس تقریب کو “ہاٹ اسپا اینڈ سنو پلے – لیاؤننگ آئیں بڑے نئے سال کے لیے” کے عنوان سے جاری کیا تھا، یہ پہلے ہی مسلسل تین سالوں سے اس کا موضوع ہے، وہ خصوصی مصنوعات اور تقریب کے راستوں کے متعلقہ سلسلے کو تخلیق کر رہا اور بنا رہا ہے اور یہاں کی لوک روایات میں کئی افراد کی دلچسپیوں اور سراہنے کی جانب توجہ مبذول کروائی ہے۔

سرمائی سیاحت کی برانڈ تاثیر اپنا کام شروع کر چکی ہے۔ “لیاؤننگ سرمائی سیاحت کے زبردست وسائل رکھتا ہے۔ یہ انوکھی چینی روایتی لوک ثقافت رکھتا ہے۔ ہم دنیا بھر کے سیاحوں کو یہاں آنے اور لیاؤنگ میں چینی نیا سال منانے کی دعوت دیتے ہیں!” وانگ سیاؤجیانگ، لیاؤننگ صوبائی سیاحتی کمیشن کے ڈپٹی ڈائریکٹر نے کہا۔

ذریعہ: لیاؤننگ پرووینشنل ٹورازم کمیشن

تصویری اٹیچمنٹ کے لنکس:
http://asianetnews.net/view-attachment?attach-id=306844

Related Posts